نَماز کی 6 شرائط NafseIslam | Spreading the true teaching of Quran & Sunnah

This Article Was Read By Users ( 1682 ) Times

Go To Previous Page Go To Main Articles Page



(۱)طَہارت:
یعنی نمازی کے بدن کا پاک ہونا، نیز اس کے کپڑے اور اس جگہ کا جس پر نماز پڑھے، پاک ہونا۔
-٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭-
(۲)سَترِ عورَت:
یعنی بدن کا وہ حصہ جس کا چھپانا فرض ہے، اس کو چھپانا۔
نوٹ:
٭- ستر عورت ہر حال میں واجب ہے، خواہ نماز میں ہو یا نہیں، تنہا ہو یا کسی کے سامنے، بلا کسی غرض صحیح کے تنہائی میں بھی کھولنا جائز نہیں اور لوگوں کے سامنے یا نماز میں توستر بالاجماع فرض ہے۔
٭- مرد کے ليے ناف کے نیچے سے گھٹنوں کے نیچے تک عورت ہے، یعنی اس کا چھپانا فرض ہے۔ ناف اس میں داخل نہیں اور گھٹنے داخل ہیں۔
٭- آزاد عورتوں اورخنثیٰ مشکل (جس میں مردوعورت دونوں کی علامتیں پائی جائیں اور یہ ثابت نہ ہو کہ مرد ہے یا عورت) کے ليے سارا بدن عورت ہے، سوا مونھ کی ٹکلی اور ہتھیلیوں اور پاؤں کے تلووں کے، سر کے لٹکتے ہوئے بال اور گردن اور کلائیاں بھی عورت ہیں، ان کا چھپانا بھی فرض ہے۔
-٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭-
(۳)اِستِقبالِ قِبلہ :
یعنی نما زمیں قبلہ یعنی کعبہ کی طرف مونھ کرنا۔
-٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭--٭-
(۴) و قت
(۵) نِیَّت
(۶) تکبیرِ تَحریمہ ۔