ایک نظر اِدھربھی NafseIslam | Spreading the true teaching of Quran & Sunnah

This Article Was Read By Users ( 256 ) Times

Go To Previous Page Go To Main Articles Page



سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو بھوک نے ستایا تو راستے میں اِس نیت سے بیٹھ گئے کہ شایدکوئی میرے دل کا حال جان لے !
بعض بزرگ صحابہ کا وہاں سے گزر ہوا ، آپ اُن سے سوال کرنے کے بجائے دینی مسئلہ پوچھتے رہے ، کہ آواز کی نقاہت وغیرہ سے مدعا سمجھ کر کھانا کھلا دیں گے ؛ لیکن وہ مسئلہ بتاکرگزرتے رہے ۔
پھر اللہ کے رسول تشریف لائے ، اور آپ کو دیکھ کر مسکرادیے ، آپ کا چہرہ پڑھ لیا ، اندر کی کفیت جان لی اورفرمایا: آؤ میرے ساتھ !
( دیکھیے:صحیح بخاری وغیرہ کتب احادیث )

جب ہمیں کوئی دوست کہتاہے:
میری والدہ بیمار ہیں ، والد ہسپتال میں ہیں ، بچہ ٹھیک نہیں ، گھروالی علیل ہے ، تو عام طور پر ہم دعا دے کرگزر جاتے ہیں ، اس کے دل کا حال جاننے کی کوشش نہیں کرتے ؛ نہ یہ سوچتے ہیں کہ ان الفاظ کے پیچھے درد وکَرب کا کیسا طوفان چُھپا ہے ۔
اللہ پاک ہمیں اپنے احباب کا رمز شناس بنائے ، ہر مشکل میں ان کے کام آیا کریں ،غمی خوشی میں ان کا ساتھ دیا کریں ؛ اس سے پہلے کہ وہ اپنی حالت بیان کرنے پر مجبور ہوجائیں اُن کی حالت جان کر جتنی ہوسکے ان کی مالی مدد کیا کریں !!

✍لقمان شاہد
18/7/2018
https://www.facebook.com/qari.luqman.92