جس سے نکاح کرنا ہے اُس کو دیکھنا NafseIslam | Spreading the true teaching of Quran & Sunnah

This Article Was Read By Users ( 1850 ) Times

Go To Previous Page Go To Main Articles Page



سُوال: سنا ہے جس سے نکاح کرناہو اُس لڑکی کو مرد دیکھ سکتا ہے!
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭
جواب:آپ نے دُرُست سناہے دونوں ہی ایک دوسرے کو دیکھ سکتے ہیں۔
صدرُ الشَّریعہ،بدرُ الطَّریقہ حضرتِ علامہ مولیٰنا مفتی محمد امجد علی اعظمی علیہ رحمۃ اللہ القوی فرماتے ہیں:
(مرد و عورت کے ایک دوسرے کو دیکھنے کی اجازت کی) ایک صورت اور بھی ہے وہ یہ کہ اس عورت سے نکاح کرنے کا ارادہ ہو تو اس نیّت سے دیکھنا جائز ہے کہ حدیث میں یہ آیا ہے کہ جس سے نکاح کرنا چاہتے ہو اس کو دیکھ لو کہ یہ بقائے مَحَبَّت کا ذَرِیعہ ہوگا۔
(1)اسی طرح عورت اُس مرد کوجس نے اس کے پاس (نکاح کیلئے) پیغام بھیجا ہے دیکھ سکتی ہے، اگرچِہ اندیشۂ شَہوت ہو مگر دیکھنے میں دونوں کی یہی نیّت ہو کہ حدیث پر عمل کرنا چاہتے ہیں۔
-----------------------------------
اگر دیکھنا ممکن نہ ہو تو کیا کرنا چاہئے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭
سُوال:اگر لڑکے لڑکی کا ایک دوسرے کو دیکھنا ممکن نہ ہو تو کوئی اورصورت ؟
٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!٭!
جواب: اِس کی صورت بیان کرتے ہوئے صدرُ الشَّریعہ،بدرُ الطَّریقہ حضرتِ علامہ مولیٰنا مفتی محمد امجد علی اعظمی علیہ رحمۃ اللہ القوی فرماتے ہیں:
جس عورت سے نکاح کرنا چاہتا ہے اگر اس کو دیکھنا ناممکن ہو جیسا کہ اس زمانہ کا رَواج یہ ہے کہ اگر کسی نے نکاح کا پیغام دے دیا تو کسی طرح بھی اسے لڑکی کو نہیں دیکھنے دیں گے یعنی اس سے اتنا زبردست پردہ کیا جاتا ہے کہ دوسرے سے اتنا پردہ نہیں ہوتا اس صورت میں اس شخص کویہ چاہئے کہ کسی عورت کو بھیج کر دِکھوالے اور وہ آ کر اس کے سامنے سارا حُلیہ و نقشہ وغیرہ بیان کر دے تا کہ اسے اس کی شکل و صورت کے مُتَعَلِّق اطمینان ہو جائے۔